Islam and Cruelty to Animals

Spread the love

(اسلام اور جانوروں پر ظلم)

Islam and Cruelty to Animals
Islam and Cruelty to Animals

Question: Does our religion of Islam allow us to have animal fights?
Answer: Our religion Islam does not allow fighting between animals.

سوال : کیا ہمارا دین اسلام ہمیں جانوروں کی لڑاٸی کروانے کی اجازت دیتا ہے؟
جواب : ہمارا دین اسلام جانوروں کی آپس میں لڑاٸی کی ہرگز اجازت نہیں دیتا ہے۔

Those who arrange animal fights, those who watch animal fights, those who do cruelty to animals, whether they are Muslims or non-Muslims, all those people should prepare themselves for a painful punishment in the Hereafter.

جانوروں کی لڑاٸی کروانے والے، جانوروں کی لڑاٸی دیکھنے والے، جانوروں پر ظلم کرنے والے خواہ مسلم ہوں یا غیر مسلم، وہ تمام لوگ آخرت میں درد ناک عذاب کے لیے خود کو تیار رکھیں۔

Because Allah Ta’ala must take revenge for the cruelty done to the speechless.
In the religion of Islam, complete rights were created for humans as well as animals.

کیونکہ بے زبانوں کے ساتھ کیے جانے والے ظلم کا بدلہ اللہ تعالیٰ نے ضرور لینا ہے۔
دین اسلام میں انسانوں کے ساتھ ساتھ جانوروں کے لیے بھی مکمل حقوق بناٸے گٸے۔

The Messenger of Allah (peace and blessings of Allah be upon him) forbade the fighting of animals in any way, whether fighting chickens or quails or rams, which is a common practice in the society, or any other animal, and with it. It is forbidden to carry heavy weight, to rain sticks on the body with force.

رسول الله صلی اللہ علیہ وسلم نے ہر طرح سے جانوروں کو آپس میں لڑانے کی ممانعت فرمائی ہے چاہے مرغوں کو لڑایا جائے یا بٹیر کو یا مینڈھے کو جس کے لڑانے کا معاشرے میں عام رواج ہے یا کسی اور جانور کو لڑایا جائے، اور اسکے ساتھ ساتھ زیادہ وزن لادنے، جسم پر زور سے ڈنڈوں کی بارش کرنے سے منع کیا ہے۔

It is narrated from Hazrat Ibn Abbas that the Messenger of Allah (peace and blessings of Allah be upon him) forbade animals to fight with each other. (Tirmidhi: Chapter of Karahiyah at-Tahrish Bin Al-Bahaim: Hadith: 1709)
He (peace and blessings of Allah be upon him) not only forbade the mistreatment and unnecessary beating of domestic animals; Rather, he forbade disturbing and teasing even non-domesticated wild animals.

حضرت ابنِ عباس سے روایت ہے رسول اللہ صلی اللہ علیہ وسلم نے جانوروں کو آپس میں لڑانے سے منع فرمایا ہے۔ (ترمذی : باب کراہیة التحریش بین البہائم : حدیث: ۱۷۰۹)
آپ صلی اللہ علیہ وسلم نے نہ صرف یہ کہ گھریلو جانورں کے ساتھ بدسلوکی اور بے جا مارپیٹ کی ممانعت کی؛ بلکہ غیر پالتو جنگلی جانوروں کو بھی بے جا پریشان کرنے اور چھیڑ خانی کو منع فرمایا۔

Because if Allah has created any living being, then it must have some important purpose. No purpose has created any kind of insects, reptiles, birds, mammals, plants, herbs and trees.

کیونکہ اللہ نے اگر کوٸی بھی جاندار پیدا کیا ہے تو اسکا کوٸی نا کوٸی اہم مقصد ضرور موجود ہے۔ بے مقصد کسی بھی قسم کے کیڑوں مکوڑوں، رینگنے والے جانوروں، پرندوں، ممالیہ جانوروں، پودوں، جڑی بوٹیوں اور درختوں کو نہیں بنایا ہے۔

Unfortunately, all this cruelty is at its peak in the Islamic Republic of Pakistan.
All of you are requested to raise your voice to stop this cruelty happening around you in your areas. This is your responsibility.
Our teachers and scholars should continue to play their role in the promotion of Islamic teachings in the common people so that in today’s era, we can get rid of this ignorance and stop the oppression of the speechless.

بدقسمتی سے یہ تمام ظلم اسلامی جمہوریہ پاکستان میں اپنے عروج پر ہے۔
آپ تمام لوگوں سے گزارش ہے اپنے علاقوں میں اپنے اردگرد ہونے والے اس ظلم کو روکنے کے لیے آواز اٹھاٸیں۔ یہ آپکی زمہ داری ہے۔
ہمارے اساتذہ اور علمإ کرام کو چاہیے عام عوام میں اسلامی تعلیمات کے فروغ میں اپنا اپنا کردار ادا کرتے رہیں تاکہ آج کے دور میں اس جہالت سے چھٹکارہ پایا جاسکے اور بے زبانوں پر ظلم بند ہوسکے۔

Share this important post as much as possible to help this message of awareness reach more people.

اس اہم پوسٹ کو زیادہ سے زیادہ شیٸر کرتے جاٸیں تاکہ آگاہی کا یہ پیغام زیادہ سے زیادہ عام لوگوں تک پہنچنے میں مدد ملتی جاٸے۔

Islam and Cruelty to Animals
Islam and Cruelty to Animals
Islam and Cruelty to Animals
Islam and Cruelty to Animals

Written by Fahad Malik

Leave a Reply

Your email address will not be published.

Translate »